Nazim's poetry

Nazim's poetry

Tuesday, February 9, 2016

Ye Baazi Dil Ki Baazi..

یہ بازی دل کی بازی ھے
بہت مشکل بہت پُرخار ھے جاناں !
سمندر راستے میں ھے
ھم اُس کے پار جاتے ہیں
جہاں اقرار کرنے کا صلہ انکار ہوتا ھے
جہاں چاھت کے بارے میں,
بہت اصرار ہوتا ھے
ھم اس دربار جاتے ہیں
ہمیشہ جیتنا ہی کیا ضروری ھے?
چلو ھم ہار جاتے ہیں

Gawahi Na Diya Kr

اب تیری وضاحت میں صداقت نہیں لگتی
اب  اپنی  محبت  کی  گواہی  نہ دیا کر...!!

Sochte Hain..

ہم تمہیں گناہ اور ثواب کے دائرے سے نکال کے سوچتے ہیں..

Behisss

بہت حساس تھی میں...
اب بے حس بھی ہوں...

Udhore Ishq

میری مکمل ذندگی تباہ کردی
تیرے ادھورے عشق نے..

Yaad Tu Aati Hogi

یوں تو پھر نہ کہو..
یاد تو آتی ہوگئی..

Tere Bagair

بےکیف ہیں یہ ساغر و مینا ترے بغیر
آساں ہوا ہے زہر کا پینا ترے بغیر

کیا کیا ترے فراق میں کی ہیں مشقّتیں
اِک ہو گیا ہے خُون پسینہ ترے بغیر

جچتا نہیں ہے کوئی نِگاہوں میں آج کل
بےعکس ہے یہ دیدہء بینا ترے بغیر

کِن کِن بلندیوں کی تمنا تھی عشق میں
طے ہو سکا نہ ایک بھی زِینہ ترے بغیر

تُو آشنائے شدتِ غم ہو تو کچھ کہوں
کِتنا بڑا عذاب ہے جینا ترے بغیر

ساحل پہ کتنے دیدہ و دل فرشِ راہ تھے
اُترا نہ پار دل کا سفینہ ترے بغیر

باقی کسی بھی چیز کا دل پر اثر نہیں
پتھر کا ہو گیا ہے یہ سینہ ترے بغیر

Related Posts Plugin for WordPress, Blogger...